قرآن کی سنہری تعلیمات ہمارے لئے مشعل راہ: شیخ بدر بن ناصر عنزی

قرآن کی  سنہری تعلیمات ہمارے لئے مشعل راہ: شیخ بدر بن ناصر عنزی

تعلیمی بیداری کانفرنس ممبئی میں نمائندہ سعودی سفارت خانہ  دہلی  شیخ بدر بن ناصر عنزی کاپرمغزخطاب

ممبئی/حج ہاؤس حج ہاؤس  پلٹن روڈ ممبئی کے کانفرنس ہال میں صوبائی جمعیت اہل حدیث ممبئی کے زیر اہتمام تعلیمی 

بیداری کانفر س کا انعقاد 28 اگست 2023 ء کو شام 5بجے ہوا جس میں ملک کے مایہ ناز علمائے کرام نے شرکت کی اورانکے بدست حفاظ کرام کی تکریم کی گئی ۔اس پروگرام میں سعودی سفارت خانہ دھلی کے نمائندہ خاص شیخ بدر بن ناصر عنزی حفظہ اللہ بطور مہمان خصوصی شریک ہوئے ۔آپ نے مجمع عام کو خطاب کرتے ہوئے فرمایا:آج کے اس عظیم الشان اجتماع اور مسابقے میں شریک ہونے والے تمام سامعین و حاضرین: سب سے پہلے میں آپ تمام حضرات کو اپنا  سلام پیش کرتا ہوں اور اس بات پر خوشی اور مسرت کا اظہار کرتا ہوں کہ آج کے اس عظیم الشان پروگرام میں شرکت کا ہمیں یہ حسین موقع ملا جسے صوبائی جمعیت اہل حدیث بمبئی کے اہتمام سے منعقد کیا گیا ہے اور جس میں مختلف علاقوں کے طلبہ اور حفاظ شریک ہو رہے ہیں۔ اس عظیم الشان اجتماع اور مسابقے پر میں دل کی گہرائیوں سے صوبائی جمعیت اہل حدیث کے ذمہ داروں کا خاص طور پر اس کے صدر باوقار شیخ عبدالسلام سلفی حفظہ اللہ کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے یہ خوبصورت مسابقہ منعقد کیا اور ہمیشہ  اسلام اور مسلمانوں کی خدمت میں کوشاں رہتے ہیں اللہ سے دعا ہے کہ اللہ تعالی انہیں نیک توفیق عطا فرمائے۔

 میرے دینی بھائیو! قران کریم کا حفظ ، اس کی تلاوت اس کے معنی اور مفاہیم پر تدبر اور غور و فکر ہر مسلمان مرد و عورت کا اہم دینی فریضہ ہے اور اس طرح کے مسابقات کا مقصد دراصل نو نہالان ملت کی تشجیع اور ان کی حوصلہ افزائی ہے اور انہیں علمی ،عملی اور تطبیقی طور پر قرآن حکیم سے جوڑنا ہے جس سے حدیث مبارک (خيركم من تعلم القرآن وعلمه )میں وارد خیر کا بہترین وعدہ پورا ہو سکے. میرے بھائیو !حکومت سعودی عرب انہیں عظیم مقاصد کے پیش نظر قرآن کی خدمت، اس کی نشر و اشاعت اور اس کے ترجموں کی طباعت کا خصوصی اہتمام کرتی ہے اور اس کے لیے اس حکومت نے مدینہ منورہ میں ایک عظیم کمپلیکس "شاہ فہد قران پرنٹنگ کمپلیکس" قائم کیا ہے جو برسوں سےاس میدان میں کوشاں ہے اور جہاں سے اب تک  تين سو ملین سے  زیادہ قرآن کےنسخوں کی الحمدللہ طباعت مکمل ہو چکی ہے، اسی طرح حکومت سعودی عرب بین الاقوامی اور علاقائی طور پر منعقد ہونے والے حفظ قرآن کے انعامی مسابقات پر خصوصی توجہ دیتی ہے جس کا ایک نمونہ ابھی حرم مکی کے صحن میں جاری رہنے والا وہ بین الاقوامی مسابقہ ہے جو" مسابقہ الملک عبدالعزیز الدولیہ" کے نام سے مشہور و معروف ہے ،قرآن مجید کے حفظ ،اس کی تلاوت اور تفسیر کے اس طرح کے مسابقات سعودی عرب کی اہم توجہ کا بہترین مرکز ہیں ، جو خودشاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعودحفظه الله کے بہترین اہتمام اور انتظام سے الحمدللہ جاری اور سارى ہیں۔

 اس مسابقے میں  117 ملکوں کے حفاظ کرام پوری دنیا سے شریک ہو رہے ہیں اور مکہ مکرمہ کی مقدس سرزمین میں یہ مسابقہ سعودی عرب کی منسٹری وزارت الشون الاسلامیہ کے سربراہ اعلی  ڈاکٹر عبداللطیف آل الشیخ کی خصوصی دیکھ ریک میں جاری اور ساری ہے، اسی طرح ہماری سعودی قیادت اپنے اہم ترین ہدایات کے مطابق  دنیا کےمسلمانوں کی صفوں میں اتحاد و اتفاق کے لیے ہمیشہ سے کوشاں  رہا کرتی ہے اور ساتھ ہی ساتھ معاشرے میں امن و امان کے قیام کے لیے جدوجہد کرتی ہے جو حکومت کے بلند مقاصد اور عزائم میں داخل اور شامل ہے کیونکہ یہ سرزمین قران کی سرزمین ہے اور وحی الہی کے نزول اور اللہ کے گھر کے مقدس اور پاک سرزمین ہے جہاں سے پوری دنیا میں وسطیت اور اعتدال کے منہج کو قائم کرنے اور اس کی نشر و اشاعت کی تگ و دو جاری اور ساری ہیں۔

 معزز بھائیو! ضروری ہے کہ ہم بہترین آئیڈیل بنیں اور اسلام اور اس کے منہج حق کے بہترین سفیر اور نمائندہ بنیں، اس طور پر کی کتاب و سنت اور منہج سلف سے مستنبط بنیادوں پر اس کا قیام ہو، جس میں بھائی چارگی اور رحم دلی بھی ہو اور اعتدال کی اور تشدد و غلو سے اجتناب کی جلوہ نمائی بھی ہو۔

 مسابقے میں شرکت کرنے والے تمام شرکا اور متسابقین کے لیے ضروری ہے کہ وہ اللہ عزوجل کا شکر ادا کریں کہ اللہ نے انہیں اہل قرآن اور اپنے خاص بندوں میں منتخب فرمایا ہے چنانچہ ان کے لیے ضروری ہے کہ وہ ہمیشہ قران مجید کو پڑھتے رہیں اور اس کی تلاوت میں لگے رہیں اور خشوع و خضوع اور خوف الہی کے ساتھ اس بابت اپنی نیتوں کو خالص کر لیں اور اس کی تعلیم اور تدریس سے ہمیشہ جڑے رہیں تاکہ قرآن کی عظیم برکتوں کے وہ مستحق بن سکیں اور اس خیر و بھلائی کے وعدہ کو پورا کر سکیں جو حدیث مبارک میں( خیرکم من تعلم القرآن )}میں وارد ہے.

 میرے بھائیو! اب انہی کلمات پر میں اپنی بات ختم کرتا ہوں اور یہ دعا کرتا ہوں کہ اللہ تعالی ہمیں ہمیشہ خیر پر چلنے کی توفیق بخشے اور اپنے قول و عمل میں ہم تمام لوگوں کو اخلاص عطا فرمائے اور اخر میں میں صوبائی جمعیت اہل حدیث ممبئی اور اس کے ذمہ داران اور اس عظیم اجتماع اور مسابقہ کے مسؤولین کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے ہمارے استقبال و ضیافت میں کوئی کسر باقی نہ چھوڑی اللہ تعالی سے دعا ہے کہ اللہ اس اجتماع کو ہم سب کے لیے بابرکت اور نفع بخش بنائے ۔یہ باتیں ممبئی کے معروف عالم دین شیخ عبدالحکیم مدنی کا ندیولی نے پریس کو جاری کی ۔اللہ سب کو نیک توفیق بخشے۔