چھوٹی سی ریاست کے وزیر اعلیٰ کا بڑا کارنامہ

چھوٹی سی ریاست کے وزیر اعلیٰ کا بڑا کارنامہ

اوڈیشہ، (اوڈیا:) ہندوستان کے مشرقی ساحل پر واقع ایک ریاست ہے۔ اڈیشہ شمال میں جھارکھنڈ، شمال مشرق میں مغربی بنگال، جنوب میں آندھرا پردیش اور مغرب میں چھتیس گڑھ اور مشرق میں خلیج بنگال سے گھرا ہوا ہے۔ یہ اسی قدیم قوم کا جدید نام ہے، کلنگا، جس پر موری بادشاہ اشوک نے 261 قبل مسیح میں حملہ کیا تھا اور جنگ میں خوفناک خونریزی سے پریشان ہو کر بالآخر بدھ مت اختیار کر لیا تھا۔ اوڈیشہ کی جدید ریاست 1 اپریل 1936 کو کٹک کے کنیکا پیلس میں ہندوستان کی ایک ریاست کے طور پر قائم ہوئی تھی اور اس نئی ریاست کے زیادہ تر شہری اوڈیا بولنے والے تھے۔ یکم اپریل کو ریاست میں اتکل دیوس (یوم اوڈیشہ) کے طور پر منایا جاتا ہے۔اوڈیشہ رقبے کے لحاظ سے ہندوستان کی نویں سب سے بڑی ریاست اور آبادی کے لحاظ سے گیارہویں بڑی ریاست ہے۔ اوڈیا زبان ریاست کی سرکاری اور سب سے زیادہ بولی جانے والی زبان ہے۔ لسانی سروے کے مطابق، اوڈیشہ کی 93.33% آبادی اوڈیا بولنے والی ہے۔ پارا دیپ کے علاوہ نسبتاً ہموار ساحلی پٹی (تقریباً 480 کلومیٹر لمبی) کی وجہ سے ریاست میں اچھی بندرگاہوں کی کمی ہے۔ تنگ اور نسبتاً چپٹی ساحلی پٹی جس میں مہانادی کا ڈیلٹا علاقہ شامل ہے ریاست کی زیادہ تر آبادی کا گھر ہے۔ جغرافیائی طور پر شمال میں چھوٹا ناگ پور سطح مرتفع ہے جو نسبتاً کم زرخیز ہے، لیکن جنوب میں مہانادی، برہمانی، سالندی اور بیترانی ندیوں کا زرخیز میدان ہے۔ یہ پورا علاقہ بنیادی طور پر چاول پیدا کرنے والا علاقہ ہے۔ ریاست کے اندرونی حصے اور کم آبادی والے پہاڑی علاقے ہیں۔ دیومالی، 1672 میٹر بلند، ریاست کا سب سے اونچا مقام ہے۔اوڈیشہ اکثر شدید طوفانوں کی زد میں رہتا ہے اور سب سے شدید طوفان، ٹراپیکل سائیکلون 05B، 1 اکتوبر 1999 کو آیا، جس سے املاک کو شدید نقصان پہنچا اور تقریباً 10,000 لوگوں کی موت ہوئی تھی۔اوڈیشہ میں سمبل پور کے قریب واقع ہیرا کڈ ڈیم دنیا کا سب سے لمبا مٹی کا ڈیم ہے۔ اوڈیشہ کئی مشہور سیاحتی مقامات کا گھر ہے، جس میں پوری، کونارک اور بھونیشور سب سے نمایاں ہیں اور انہیں مشرقی ہندوستان کا سنہری مثلث کہا جاتا ہے۔ ہر سال لاکھوں سیاح پوری کے جگن ناتھ مندر کو دیکھنے آتے ہیں جس کی رتھ یاترا دنیا بھر میں مشہور ہے اور کونارک کا سورج مندر۔ برہما پور کے قریب جوگڑا میں واقع اشوک کا مشہور نوشتہ اور کٹک میں بارابتی قلعہ ہندوستان کی آثار قدیمہ کی تاریخ میں اہم ہیں۔اس ریاست کے وزیر اعلیٰ نوین پٹنایک ہیں جو اپنی سادگی،کام کرنے کے طریقے ،خاموش مزاجی اور عمدہ تحریروں کے لئے سیاسی اور عوامی حلقوں میں ایک الگ شناخت رکھتے ہیں۔وہ محنت کشوں،غریبوں اور حاشئے پر رہنے والے لوگوں کے لئے اپنے انداز سے الگ ہی کام کرنے کے لئے بھی جانے جاتے ہیں۔حال ہی میں انہوں نے ریاست کے 57  ہزار کانٹریکٹ ملازمین کو مستقل کرنے کا اعلان کیا ہے۔انہوں نے یہ بھی اعلان کیا ہے کہ اب ٹھیکے پر کام کرنے کی روایت کو سدا کے لئے اڑیسہ سے ختم کردیا گیا ہے۔واضح رہے کہ نوین پٹنائک اپنے والد بیجو پٹنائک کے نقش قدم پر چلنے کا اب سے 25 سال پہلے عہد کرچکے ہیں۔انہوں نے اب تک شادی نہیں کی ہے ۔ان کے کسی بھی اخبار میں اشتہار نظر نہیں آتے۔شہرت کی بھوک ان میں بالکل نہیں ہے شاید یہی وجہ ہے کہ وہ اس ریاست کے سب سے زیادہ مقبول اور طویل عرصے تک اپنے عہدے پر برقرار رہنے والے وزیر اعلیٰ ہیں۔