الوداع نیتا جی: بجھ گیا سماجوادی امیدوں کا چراغ

الوداع نیتا جی: بجھ گیا سماجوادی امیدوں کا چراغ
الوداع نیتا جی: بجھ گیا سماجوادی امیدوں کا چراغ

یوپی میں چھایا ماتم ،ریاستی حکومت نے تین دن کے سوگ کا کیا اعلان ،ملائم سنگھ کے انتقال پر وزیر اعظم مودی،وزیر داخلہ  امیت شاہ، کانگریس صدرسونیا گاندھی، یوپی کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ سمیت متعددسیاست دانوں کا اظہار تعزیت،سیفئی میں کل ہوں گی آخری رسومات

ارشدندیم

یو این آئی؍ایجنسیاں؍سیاسی تقدیر بیورو؍ نئی دہلی، 10 اکتوبر:سماج وادی پارٹی کے بانی اور اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی ملائم سنگھ یادو کا طویل علالت کے بعد پیر کو انتقال ہو گیا۔ صدر دروپدی مرمو، نائب صدر جگدیپ دھنکھڑ اور وزیر اعظم نریندر مودی سمیت مختلف جماعتوں کے رہنماؤں نے مسٹر یادو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اور ایس پی صدر اکھلیش یادو نے ٹوئٹر پر مسٹر ملائم سنگھ یادو کے انتقال کی اطلاع دی۔ انہوں نے کہا کہ میرے والد محترم اور سب کے لیڈر نہیں رہے ۔ان کی عمر 82 برس تھی۔ میدانتا اسپتال نے بتایا کہ مسٹر یادو کا طویل علالت کے بعد صبح 8.16 بجے انتقال ہوگیا۔ وہ گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے اسپتال میں داخل تھے ۔ ان کے کئی اعضاء نے کام کرنا بند کردیا تھا اور وہ وینٹی لیٹر پر تھے ۔ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ کے انتقال پر اتر پردیش حکومت نے ریاست میں تین روزہ سرکاری سوگ اور ان کی آخری رسومات پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ ادا کئے جانے کا اعلان کیا ہے ۔ مسٹر یادو کی منگل کی سیفئی میں پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ آخری رسومات ادا کی جائیں گی۔ایس پی نے ٹویٹ کیا، ‘‘محترم نیتا جی کا آج صبح گروگرام کے میدانتا اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ ان کے جسد خاکی کو سیفئی لے جایا جا رہا ہے ۔ ان کی آخری رسومات کل (11 اکتوبر) سہ پہر 3 بجے سیفئی میں ادا کی جائے گی۔مسٹر یادو 22 نومبر 1939 کو سیفئی، ضلع اٹاوا میں پیدا ہوئے تھے ۔ وہ اس وقت مین پوری لوک سبھا سیٹ سے ممبر پارلیمنٹ تھے ۔مسٹر یادو تین بار اتر پردیش کے وزیر اعلی رہے اور وزیر دفاع کے طور پر بھی ملک کی خدمت کی۔ وہ 10 بار ایم ایل اے اور سات بار لوک سبھا ایم پی منتخب ہوئے ۔صدرجمہوریہ محترمہ دروپدی مرمو، نائب صدر جگدیپ دھنکھڑ، مسٹر مودی اور مختلف پارٹیوں کے کئی لیڈروں نے مسٹر یادو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔ ٹویٹر پر اپنے تعزیتی پیغام میں صدر محترمہ مرمو نے لکھا، "مسٹر ملائم سنگھ یادو کا انتقال ملک کے لیے ایک ناقابل تلافی نقصان ہے ۔ عام ماحول سے آنے والے ملائم سنگھ یادو جی کے کارنامے غیر معمولی تھے ۔ 'دھرتی پتر' ملائم جی زمین سے وابستہ ایک تجربہ کار رہنما تھے ۔ تمام جماعتوں کے لوگ ان کی عزت کرتے تھے ۔ ان کے اہل خانہ اور حامیوں کے تئیں میری گہری تعزیت ۔"مسٹر مودی نے مسٹر یادو کی موت کو ملک کے لئے ایک ناقابل تلافی نقصان قرار دیا۔ انہوں نے کہاکہ ''مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کو ایک قابل ذکر شخصیت سے نوازا گیا تھا۔ انہیں ایک شائستہ اور زمینی رہنما کے طور پر بڑے پیمانے پر سراہا گیا۔ وہ عوام کے مسائل کے تئیں حساس تھے ۔ انہوں نے تندہی سے لوگوں کی خدمت کی اور اپنی زندگی لوک نائک جے پرکاش نارائن اور ڈاکٹر رام منوہر لوہیا کے نظریات کو مقبول بنانے کے لیے وقف کر دی۔ایک دیگر ٹویٹ میں انہوں نے کہا، "ملائم سنگھ یادو جی نے اتر پردیش اور قومی سیاست میں اپنی الگ پہچان بنائی۔ وہ ایمرجنسی کے دوران جمہوریت کے لیے ایک ممتاز سپاہی رہے ۔ وزیر دفاع کی حیثیت سے انہوں نے ایک مضبوط ہندوستان کے لیے کام کیا۔ ان کی پارلیمانی مداخلت عملی تھی اور قومی مفاد کو آگے بڑھانے پر زور دیتے تھے ۔انہوں نے کہا، "ہم نے اپنی اپنی ریاستوں کے وزیر اعلی کے طور پر کام کیا، پھر میں نے مسٹر ملائم سنگھ یادو جی سے کئی بار بات چیت کی۔ قربت جاری رہی اور میں ہمیشہ ان کے خیالات سننے کا منتظر رہا۔ میں ان کے انتقال سے دکھی ہوں۔ ان کے خاندان اور لاکھوں حامیوں سے میری تعزیت۔ اوم شانتی۔"مسٹر مودی نے مسٹر ملائم سنگھ یادو کے ساتھ اپنی ملاقات کی کئی تصویریں بھی ٹوئٹر پر شیئر کیں۔مسٹر برلا نے لکھا کہ ملائم سنگھ یادو سوشلزم کی آواز تھے ، وہ ہمیشہ محروم طبقات کی فلاح و بہبود کے لیے وقف رہے ۔ بڑھتی عمر اور خرابی صحت کے باوجود ملائم جی لوک سبھا میں سرگرم تھے ۔ ملائم نے جے پی اور لوہیا کی روایات کو آگے بڑھایا، ملک کے وزیر دفاع اور اتر پردیش کے وزیر اعلی کے طور پر انہوں نے طویل عرصے تک ملک اور سماج کی خدمت کی، بھگوان مرحوم کی روح کو سکون دے ۔کانگریس صدر سونیا گاندھی، سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ، کانگریس لیڈر راہل گاندھی اور پارٹی کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے سماج وادی پارٹی کے رہنما ملائم سنگھ کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔اپنے تعزیتی پیغام میں محترمہ گاندھی نے کہا کہ وہ مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کے انتقال کی خبر سن کر افسردہ ہیں۔ سوشلسٹ نظریات کی ایک آواز آج خاموش ہو گئی۔انہوں نے کہا کہ ملک کے وزیر دفاع اور اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ کے طور پر ملائم سنگھ جی کا تعاون ہمیشہ ناقابل فراموش رہے گا۔ اس سے بڑھ کر یہ کہ ان کی مظلوموں اور پس ماندہ لوگوں کے لیے جدوجہد ہمیشہ یاد رکھی جائے گی۔ جب بھی ملک کی آئینی اقدار کے تحفظ کی ضرورت پڑی، کانگریس کو ہمیشہ ان کی حمایت حاصل رہی ہے ۔ بھگوان ان کی روح کو سکون دے ۔ یہ ان کے خاندان اور حامیوں کے لیے انتہائی افسوسناک وقت ہے ۔ مسٹر اکھلیش یادو اور ان کے اہل خانہ سے میری تعزیت۔ مرحوم کی روح کو سلام اور دلی خراج عقیدت۔مسٹر ملائم سنگھ یادو کی موت پر تعزیت کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ نے سماج وادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو کو لکھا، "وہ ایک ایسے لیڈر تھے جن کی ہر کوئی عزت کرتا تھا۔ بھگوان آپ کو یہ دکھ برداشت کرنے کی طاقت دے ۔ مسٹر راہل گاندھی نے ٹویٹ کیا، "مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کا انتقال ایک انتہائی افسوسناک خبر ہے ۔ وہ نچلی سطح کی سیاست سے وابستہ ایک سچے جنگجو تھے ۔ میں مسٹر اکھلیش یادو سمیت تمام سوگوار کنبہ کے افراد کے تئیں اپنی گہری تعزیت کا اظہار کرتا ہوں۔ محترمہ واڈرا نے ٹویٹ کیا، "مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کے انتقال کی افسوسناک خبر ملی۔ اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ، وزیر دفاع اور سماجی انصاف کے مضبوط پیروکار کے طور پر ہندوستانی سیاست میں ان کی لاجواب شراکت کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔ اکھلیش یادو اور دیگر تمام چاہنے والوں کے تئیں میری گہری تعزیت، بھگوان مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کو اپنے قدموں میں جگہ دے ۔ 

اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے مرکزی اپوزیشن پارٹی ایس پی کے بانی ملائم سنگھ یادو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔ یوگی نے مسٹر یادو کے انتقال پر ریاست میں تین دن کے سرکاری سوگ اور ان کی آخری رسومات پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ ادا کی جانے کا اعلان کیا ہے ۔پیر کو وزیر اعلیٰ کی طرف سے جاری ایک تعزیتی پیغام میں یوگی نے مسٹر یادو کے بیٹے اکھلیش یادو اور ان کے بھائی رام گوپال یادو سے فون پر بات چیت کر کے تعزیت کا اظہار کیا۔ یوگی نے کہا، "اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اور سماج وادی پارٹی کے بانی مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کا انتقال انتہائی افسوسناک ہے ۔ ان کی موت سے سوشلزم کا بنیادی ستون اور جدوجہد کا دور ختم ہو گیا۔ مسٹر یوگی نے کہا، ‘‘میں بھگوان سے مرحوم کی روح کو سکون اور غمزدہ خاندان اور حامیوں کے تئیں اپنی تعزیت کا خواہاں ہوں۔ اتر پردیش حکومت نے مسٹر ملائم سنگھ یادو جی کے انتقال پر تین دن کے سرکاری سوگ کا اعلان کیا ہے ۔ ان کی آخری رسومات پورے سرکاری اعزاز کے ساتھ ادا کی جائیں گی۔"اتر پردیش کی سابق وزیر اعلیٰ اور بہوجن سماج پارٹی کی صدر مایاوتی نے پیر کے روز مسٹر ملائم سنگھ یادو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا۔محترمہ مایاوتی نے ٹویٹ کیا، "سماجوادی پارٹی کے بزرگ رہنما اور اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی ملائم سنگھ یادو جی کے آج انتقال کے بارے میں سن کر بہت دکھ ہوا۔ ان کے اہل خانہ اور تمام خیر خواہوں سے میری گہری تعزیت۔ بھگوان ان سب کو یہ دکھ برداشت کرنے کی طاقت دے ۔اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور ریاست کی اہم اپوزیشن سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے بانی ملائم سنگھ یادو، ان کے چھوٹے بھائی اور پرگتی شیل سماج وادی پارٹی (پی ایس پی) کے صدر شیو پال سنگھ یادو نے پیر کو ان کی موت پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان موت کی حقیقت کو قبول کرنا مشکل ہے ۔ مسٹر یادو نے ٹویٹ کیا، "میرے بزرگ، توانائی کا سرچشمہ اور ہم سب کے سرپرست، قابل احترام نیتا جی اب ہمارے درمیان نہیں ہیں۔ اس سچائی کو قبول کرنا مشکل ہے ۔ آپ ہماری یادوں اور خیالات میں ہمیشہ زندہ رہیں گے ۔"

مہاراشٹر کے وزیر اعلی ایکناتھ شندے نے ایس پی کے بانی ملائم سنگھ یادو کو خراج عقیدت پیش کیا۔مسٹر شندے نے ٹویٹ کیا، "آنجہانی ملائم سنگھ کی سیاسی زندگی اتار چڑھاؤ اور کردار سے بھری ہوئی تھی۔ انہوں نے پارٹی کی تشکیل، تنظیم سازی سے لے کر ملک کی سب سے بڑی ریاست کے وزیر اعلیٰ اور مرکزی وزیر بننے تک مختلف مراحل میں اپنی چھاپ چھوڑی۔ انہوں نے کہا کہ آنجہانی ملائم سنگھ یادو کو ایک لیڈر اور سفارت کار کے طور پر پہچان ملی۔ ملک کے سماجی کاموں اور سیاست میں ان کے تعاون کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے سماج وادی کے بانی ملائم سنگھ یادو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔مسٹر کیجریوال نے ایک ٹویٹ میں کہا، "اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اور سوشلسٹ لیڈر ملائم سنگھ یادو جی کے انتقال کی افسوسناک خبر۔ بھگان مرحوم کی روح کو اپنے قدموں میں جگہ دے اور ان کے تمام چاہنے والوں اور لواحقین کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی طاقت دے ۔ تمل ناڈو کے وزیر اعلی اور ڈی ایم کے صدر ایم کے اسٹالن اور پٹالی مکل کچی کے صدر اور راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹر انبومنی رام داس اور مختلف پارٹیوں کے لیڈروں نے اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور سماج وادی پارٹی کے بانی ملائم سنگھ یادو کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔مسٹر اسٹالن نے کہا کہ پارٹی کے خزانچی اور ڈی ایم کے پارلیمانی لیڈر ٹی آر بالو ڈی ایم کے کی جانب سے آنجہانی ملائم سنگھ یادو کو خراج عقیدت پیش کریں گے ۔ انہوں نے ٹویٹ کیا، "اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اور سماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر ملائم سنگھ یادو کے انتقال سے دکھی ہوں۔ ملائم سنگھ یادو سیکولر نظریات کے پابند تھے ۔ وہ او بی سی کے لیے ریزرویشن کے لیے کھڑے تھے ۔ ان کی وفات ایک ناقابل تلافی نقصان ہے۔ دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ منیش سسودیا نے کہا، " اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اور سیاسی دنیا میں پسماندہ طبقات کے حقوق کے لیے لڑنے والے ملائم سنگھ یادو جی کا انتقال بہت افسوسناک ہے ۔ ان کے خیر خواہوں، چاہنے والوں اور حامیوں سے میری تعزیت۔ بھگوان شری رام ان کی روح کو اپنے قدموں میں جگہ دے اور سکون عطا کرے ۔ عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر سنجے سنگھ نے کہا کہ ہندوستانی سیاست میں پسماندہ اور استحصال زدہ لوگوں کی آواز سابق وزیر اعلیٰ ملائم سنگھ یادو کے انتقال کی افسوسناک خبر ملی۔ بھگوان ان کی روح کو سکون دے اور ان کے اہل خانہ اور پسماندگان کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی ہمت دے ۔ایس پی کے سینئر لیڈر اور سابق ایم پی ڈاکٹر چندر پال سنگھ یادو سمیت مختلف پارٹیوں کے لیڈروں نے مسٹر ملائم سنگھ یادو کی موت کو ناقابل تلافی نقصان قرار دیا ہے ۔ آج یہاں مسٹر ملائم سنگھ یادو کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ڈاکٹر چندرپال نے کہا، ''نیتا جی کا انتقال پارٹی کے لیے ایک بڑا دھچکا ہے ۔ ان کے انتقال سے ہونے والا نقصان کوئی نہیں پورا کر سکتا۔ ہم نے ان کے ساتھ کام کیا ہے اور آج ان کے انتقال کے غم کو الفاظ میں بیان کرنا ممکن نہیں۔"کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیر پردیپ جین نے کہا، "ملائم سنگھ جی ایک کرم یوگی تھے جنہوں نے سوشلزم کے تصور کو سمجھنے کے لیے کام کیا۔ انہوں نے اتر پردیش کو ایک نئی شکل دی۔ ان کے جانے سے جو نقصان ہوا ہے وہ ریاست میں کبھی پورا نہیں ہو سکتا۔ ہمیں لوک سبھا میں بھی ان کے ساتھ رہنے کا موقع ملا، انہوں نے سوشلزم کے لیے اپنا سیاسی سفر شروع کیا اور زندگی بھر اس پر عمل کیا۔ ان کے واضح اور پرعزم انداز نے تمام مذاہب کو متحد کرنے کا کام کیا۔ وہ ایک آفاقی لیڈر کے طور پر ابھرے جو پارٹی سے بالاتر تھے ۔ اس وجہ سے چاہے وہ کسی بھی پارٹی کے لیڈر کیوں نہ ہوں، ملائم سنگھ جی کی پوری عزت کرتے تھے ۔ ان کی موت سے نہ صرف پارٹی یا خاندان بلکہ پورے ملک کو بہت بڑا نقصان پہنچا ہے ۔ ملک نے ایک قابل اور معروف لیڈر کھو دیا ہے ۔سماج وادی پارٹی کے سبکدوش ہونے والے جھانسی ضلع کے صدر مہیش کشیپ نے کہا، "ایسے قابل احترام لیڈر کا جانا نہ صرف پارٹی کے لیے بڑا نقصان ہے بلکہ یہ ملک کے لیے بھی بڑا نقصان ہے ۔ انہوں نے ہمیشہ ساتھی ، اپوزیشن اور لوگوں کو ساتھ لیکر چلے ۔ یہ کہنا بڑی مشکل بات ہے کہ ایسا لیڈر مستقبل میں کبھی ملے گا۔ دکھ کی اس گھڑی میں ہم سب سوگوار خاندان کے ساتھ ہیں۔ ضلع میں پارٹی ذرائع نے بتایا کہ نیتا جی کے انتقال پر یہاں سابق رکن پارلیمنٹ ڈاکٹر چندر پال سنگھ یادو کی رہائش گاہ پر ایک تعزیتی اجلاس منعقد کیا جائے گا۔راجستھان کے گورنر کلراج مشرا، وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت،  بی جے پی کے ریاستی صدر ڈاکٹر ستیش پونیا، سابق وزیر اعلیٰ وسندھرا راجے ، ریاستی کانگریس کے صدر گووند سنگھ دوٹاسرا اور سابق نائب وزیر اعلیٰ سچن پائلٹ، سابق وزیر دفاع اور راجستھان سمیت کئی رہنماؤں نے اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ ملائم سنگھ یادو کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے مسٹر مشرا نے کہا کہ مسٹر یادو کے ساتھ ان کے قریبی تعلقات تھے اور ان کی موت ہندوستانی سیاست کے لیے ایک ناقابل تلافی نقصان ہے ۔ انہوں نے بھگوان سے پرارتھنا کی کہ وہ سوگوار خاندان کو یہ عظیم نقصان برداشت کرنے کی ہمت دے اور لواحقین کو صبر جمیل عطا فرمائے ۔سماج وادی پارٹی کے بانی سرپرست مسٹر یادو کے انتقال پر تعزیت کرتے ہوئے مسٹر گہلوت نے کہا کہ ایک تجربہ کار سیاست دان، سابق مرکزی وزیر اور سابق وزیر اعلیٰ مسٹر یادو کی حیثیت سے ان کی شراکت بہت زیادہ تھیں۔ انہوں نے بھگوان سے پرارتھنا کی کہ وہ ان کے اہل خانہ کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی طاقت دے اور مرحوم کی روح کو سکون عطا فرمائے ۔ڈاکٹر پونیا نے کہا کہ ملک کے سابق وزیر دفاع اور اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ ملائم سنگھ یادو کے انتقال کی خبر انتہائی افسوسناک ہے ۔ ان کے اہل خانہ اور خیر خواہوں سے دلی تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے پرارتھنا کی کہ بھگوان مرحوم کی روح کو سکون عطا فرمائے ۔محترمہ راجے نے کہا کہ مسٹر یادو کے انتقال کی خبر سن کر دکھ ہوا۔ نیتا جی کثیر جہتی شخصیت کے مالک تھے ۔ وہ ہندوستانی سیاست میں ایک موثر رہنما تھے ، جنہوں نے نہ صرف اتر پردیش بلکہ ملک کی ترقی میں بھی بہت اہم کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر یادو کی موت ہندوستانی سیاست کے لئے بہت بڑا نقصان ہے ۔ انہوں نے بھگوان سے پرارتھنا کی کہ وہ مرحوم کی روح کو سکون اور ان کے اہل خانہ اور مداحوں کو طاقت عطا فرمائے ۔راشٹریہ لوک تانترک پارٹی (آر ایل پی) کے کنوینر اور ناگور کے ایم پی ہنومان بینیوال نے بھی مسٹر یادو کی موت پر غم کا اظہار کیا اور کہا کہ ان کی موت افسوسناک خبر ہے ۔ انہوں نے سوگوار لواحقین سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے پرارتھنا کی کہ بھگوان مرحوم کی روح کو سکون عطا فرمائے ۔ اسی طرح کئی دیگر رہنماؤں نے بھی ان کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا۔سماج وادی پارٹی کے سینئر لیڈر ملائم سنگھ یادو کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان نے آج کہا کہ وہ زمین سے جڑے لیڈر تھے ۔اپنے خراج عقیدت کے پیغام میں مسٹر چوہان نے کہا کہ آنجہانی یادو نچلی سطح کے لیڈر تھے ۔ انہوں نے کہا کہ جب انہوں نے اور مسٹر یادو نے اپنی اپنی ریاستوں کے چیف منسٹرس کے طور پر کام کیا تو انہوں نے (چوہان) مسٹر یادو کے ساتھ کئی بار مختلف مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔انہوں نے کہا کہ وہ مسٹر یادو کے افسوسناک انتقال پر سوگوار خاندان اور حامیوں سے تعزیت کا اظہار کرتے ہیں۔آندھرا پردیش کے وزیر اعلی کے چندر شیکھر راؤ (کے سی آر) نے پیر کو سماج وادی پارٹی کے بانی اور اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی ملائم سنگھ یادو کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔مسٹر راؤ نے کہا کہ مسٹر ملائم سنگھ یادو نے مشہور سماجوادی لیڈر رام منوہر لوہیا اور مشہور آزادی پسند رہنما راج نارائن جیسے عظیم لیڈروں کی تحریک سے سیاست میں قدم رکھا۔مسٹر کے سی آر نے کہا کہ ملک کی سب سے بڑی ریاست اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ اور مرکزی وزیر کے طور پر خدمات انجام دینے والے مسٹر ملائم سنگھ یادو نے زندگی بھر غریبوں اور کمزور طبقات کی فلاح و بہبود کے لیے کام کیا۔انہوں نے ملائم سنگھ یادو کے بیٹے اکھلیش یادو اور ان کے اہل خانہ کے تئیں اپنی گہری تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے سوموار کو ایس پی کے بانی ملائم سنگھ یادو کی موت پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندان سے تعزیت کا اظہار کیا۔ مسٹر سنہا نے ٹویٹ کیا، "اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی ملائم سنگھ یادو جی کا انتقال ہندوستانی سیاست کے لیے ایک ناقابل تلافی نقصان ہے ۔ ان کو میرا دلی خراج عقیدت۔ بھگوان مرحوم کی روح کو سکون دے اور لواحقین کو ہمت دے ۔